کتاب: بیماریاں اور ان کا علاج مع طب نبوی - صفحہ 210
اسکے سامنے دوزخ پیش کی جاتی ہے اور اس سے کہا جاتا ہے کہ یہ (قبر سے نکلنے کے بعد) تیرا ٹھکانہ ہے، یہاں تک کہ اﷲ تعالیٰ تجھے قیامت کے دن اس ٹھکانہ کی طرف اٹھائے گا جوتجھے دکھایاجارہاہے۔‘‘(بخاری،مسلم) 3. ’’کفار کو قبر میں گرز (ہتھوڑا) سے عذاب قبر ہوتا ہے۔ اس گرز کے مارے جانے سے وہ اس زور سے چیختا ہے کہ انسان اور جن کے علاوہ اس کے قریب کی ہر چیز اس کی چیخ و پکار سنتی ہے۔‘‘(بخاری) ﴿ وضاحت: انسانوں کو یہ آواز اسلئے نہیں سنائی جاتی کہ اﷲ ربُّ العزّت ہمارا امتحان لینا چاہتے ہیں کہ ہم غیب پر ایمان لاتے ہیں یا نہیں؟ 4. ’’اگر مجھے یہ خطرہ نہ ہوتا کہ تم اپنے مردہ د فنانا چھوڑ د وگے تو میں اﷲ تعالیٰ سے دعا کرتا کہ وہ تمہیں عذابِ قبر سنادے جو میں سنتا ہوں‘‘ (مسلم) 5.’’جس طرح سورۂ اَلم سَجْدَہ اور سورہ ٔملک کی تلاوت ، عذاب قبر سے بہت زیادہ بچانے والی ہیں۔ اسی طرح چغل خوری کرنا اور پیشاب کی چھینٹوں سے نہ بچنا دو نوں عذاب قبر میں بہت زیادہ مبتلا کرنے والے اعمال ہیں۔‘‘(بخاری) 6. ’’ جب تم اﷲ سے سوال کرو تو جنت الفردوس کا سوال کرو کیو نکہ وہ جنت کا سب سے بہتر اور بلند درجہ ہے۔ اس کے اوپررحمن کا عرش ہے اور اسی سے جنت کی (40) نہریں نکلتی ہیں۔‘‘(بخاری) اَللّٰھُمَّ اِنَّا نَسْئَلُکَ الْجَنَّۃَ الْفِرْدَوْسَ (ترجمہ)’’اے اللہ،ہم آپ سے جنت الفردوس کا سوال کرتے ہیں۔‘‘ قتل و غارت گری سے بچنے کا علاج مندرجہ ذیل اعمال کریں اِنْ شَائَ اللّٰہُ الْعَزِیْزُ پورے دن اور رات اﷲ تعالیٰ کی حفاظت میں رہیں گے۔ فرمان رسول اکرم صلی اللہ علیہ وسلم ہے :۔ 1. ’’ اے لوگو، اﷲ تعالیٰ سے توبہ کرو۔ میں بھی اس سے ہردن 100 مرتبہ توبہ کرتاہوں۔ ‘‘(مسلم) یعنی 100 مرتبہ اَسْتَغْفِرُاللّٰہَ اَسْتَغْفِرُاللّٰہَ پڑھا کرو اگرپوری استغفار پڑھی جائے تو بہت ہی اچھاہے پوری استغفاریہ ہے :