کتاب: بیماریاں اور ان کا علاج مع طب نبوی - صفحہ 160
روح کی بیماریوں کا علاج اگر ہم اپنا لباس خوب صاف ستھرا رکھیں اور جسم کو گندہ رکھیں (نہ نہائیں، نہ ناخن کاٹیں اور مہینوں غیرضروری بال نہ کاٹیں) تو جسم بیمار ہو جائیگا۔ صرف ظاہری صفائی نظر آئیگی۔ اسی طرح جسم کے اندر روح ہوتی ہے۔ جسم کی طرح روح بھی بیمار ہوجاتی ہے اسلئے دونوں کا الگ الگ علاج اور صفائی کرنا ضروری ہے۔ اسکی مثال ایسی ہے کہ کوئی شخص اپنے گھو ڑے کو تو روزانہ خوب اچھی خوراک دے اور خود بہت ہی کم کھائے اور پھر اس پر سواری بھی کرے نتیجہ یہ ہو گا کہ گھوڑا تو خوب بھاگے گا لیکن وہ خود گر کر زخمی ہو جائیگا۔ اسلئے کہ گھوڑا خوب فربہ ہوگا اور وہ خود کمزور۔ ہم اپنے جسم کو تو خوب خوراک دیتے ہیں لیکن روح کو اس کی غذا نہیں دیتے۔ اسلئے روح بیمار ہو جاتی ہے، جو ہم کو نظر نہیں آتی۔ غصہ، بخل، حرص، حسد، تکبر،رشوت، سود کا لین دین، بد نظری، عزت اور مال کی بے جا محبت،دل دکھانا، کینہ،جھوٹ غیبت روح کو بیمار کرنے کی اصل وجوہ ہیں ان سے بچئے اور ان بیماریوں کے مندرجہ ذیل علاج کیجئے:۔ 1. اللہ تعالیٰ کے دئیے ہوئے مال و عزت پر قناعت کرلیجئے۔2. اﷲ ربّ ا لعزّت اور اسکے رسول صلی اللہ علیہ وسلم کے ہر حکم پر خوشی خوشی عمل کریں یعنی توحید، نماز، روزہ، زکوٰۃ اور حج وغیرہ۔ شرک نہ کریں، شرک ناقابل معافی گناہ ہے۔ 3. پانچوں نمازیں وقت پر باجماعت پڑھیں۔4.حرام کمائی سے بچیں۔ 5.ہر سال زکوٰۃ حساب کر کے پوری دیں۔ یاد رکھیں روح کی غذا ذکر اﷲ اور اﷲکے تمام احکام کو ماننا اور ان پر عمل کرنا ہے۔ اﷲ کا چلتے پھرتے، بستر پر، بازار میں اورہر پاک جگہ ذکر کرتے رہیں، ’’ا فضل ذکر لَآاِلٰـــہَ اِلَّااللّٰہُ ہے۔‘‘ (ترمذی) ﴿ مزید تفصیل کیلئے پڑھیئے ترجمہ و تفسیر اٰل عمران 3 : آیات 192-191 عقلمند لوگ وہ ہیں جو ایک وقت میں 2کام کرتے ہیں۔ ہاتھ پیر سے دنیا کماتے ہیں اور زبان سے آخرت یعنی دنیاوی کاموں کے دوران بھی ذکر اﷲ کرتے رہتے ہیں۔