کتاب: بیماریاں اور ان کا علاج مع طب نبوی - صفحہ 104
ادْعُوا رَبَّكُمْ تَضَرُّعًا وَخُفْيَةً ۚ إِنَّهُ لَا يُحِبُّ الْمُعْتَدِينَ ﴿٥٥﴾ وَلَا تُفْسِدُوا فِي الْأَرْضِ بَعْدَ إِصْلَاحِهَا وَادْعُوهُ خَوْفًا وَطَمَعًا ۚ إِنَّ رَحْمَتَ اللَّـهِ قَرِيبٌ مِّنَ الْمُحْسِنِينَ ﴿٥٦﴾ قُلِ ادْعُوا اللَّـهَ أَوِ ادْعُوا الرَّحْمَـٰنَ ۖ أَيًّا مَّا تَدْعُوا فَلَهُ الْأَسْمَاءُ الْحُسْنَىٰ ۚ وَلَا تَجْهَرْ بِصَلَاتِكَ وَلَا تُخَافِتْ بِهَا وَابْتَغِ بَيْنَ ذَٰلِكَ سَبِيلًا ﴿١١٠﴾ وَقُلِ الْحَمْدُ لِلَّـهِ الَّذِي لَمْ يَتَّخِذْ وَلَدًا وَلَمْ يَكُن لَّهُ شَرِيكٌ فِي الْمُلْكِ وَلَمْ يَكُن لَّهُ وَلِيٌّ مِّنَ الذُّلِّ ۖ وَكَبِّرْهُ تَكْبِيرًا ﴿١١١﴾ تم لوگ اپنے رب سے دعا کیا کرو گِڑ گڑا کر اور چپکے چپکے بھی۔ (یاد رکھو کہ) اﷲ ان لوگوں کو ناپسند کرتے ہیں جو حد سے نکل جائیں اور بعداسکے کہ دنیا میں اسکی درستی کردی گئی ہے فساد مت پھیلاؤاوراسکی(یعنی اﷲکریم کی)عبادت کیاکرو خوف وامیدمیں رہتے ہوئے۔بیشک اﷲ کی رحمت نزدیک ہے نیک کام کرنیوالوں سے۔ (سورۂ اعراف 7:آیات54تا56) (ترجمہ)﴿’’آپ فرما دیجئے کہ اﷲ کہہ کر پکارو یا رحمن کہہ کر جس (نام) سے بھی پکارو گے، اس کے بہت اچھے (اچھے) نام ہیں اور اپنی نماز میں نہ تو بہت پکار کر پڑھئے اور نہ بالکل چپکے چپکے ہی پڑھئے بلکہ دونوں کے درمیان ایک طریقہ اختیار کر لیجئے اور کہہ دیجئے کہ تمام خوبیاں اسی اﷲ (پاک) کیلئے خاص ہیں جو نہ اولاد رکھتا ہے اور نہ ہی کوئی سلطنت میں اسکا شریک ہے اور نہ کمزوری کی و جہ سے اسکا کوئی مددگار ہے اور اسکی بڑائیاں خوب بیان کیجئے۔‘‘ (بنی اسرائیل 17:آیات110تا111) … اﷲ اکبر