کتاب: اپنے آپ پر دم کیسے کریں - صفحہ 73
۳۔((اللّٰہُمَّ رَبَّ النَّاسِ أَذْھِبَ الْبَأسَ وَاشْفِ اَنْتَ الشَّافِی لَا شِفَائََ اِلَّا شِفَاؤُکَ شِفَائً لَا یُغَادِرُ سَقَمًا)) ’’ اے اللہ لوگوں کے رب بیماری دور کردے شفا دے دے تو ہی شفا دینے والا ہے تیرے سوا کوئی شفا دینے والا نہیں ہے ایسی شفا عطا فرما جو کسی قسم کی بیماری نہ چھوڑے۔‘‘[1] ۴۔(( اُعُوْذُ بِکَلِمَاتِ اللّٰہِ التَّامَّۃِ مِنْ کُلِّ شَیْطَانٍ وَّھَامَّۃٍ وَّمِنْ کُلِّ عَیْنٍ لَّامَّۃٍ)) [2] ’’ ہر شیطان اور زہریلے جانورسے اور ہر نظر بد سے اللہ تعالیٰ کے مکمل کلمات کے ساتھ پناہ میں آتا ہوں ۔‘‘ ۵۔ ((اَعُوْذُ بِکَلِمَاتِ اللّٰہِ التَّامَّاتِ مِنْ شَرِّ مَا خَلَقَ )) [3] ’’ میں اللہ تعالی کے مکمل کلمات کیساتھ اسکی ہرمخلوق سے پناہ پکڑتا ہوں ۔‘‘ ۶۔ ((اَعُوْذُ بِکَلِمَاتِ اللّٰہِ التَّامَّاتِ ؛ مِنْ غَضَبِہٖ وَ شَرِّ [1] البخاری(۵۶۷۵)۔ مسلم(۲۱۹۱)۔ [2] بخاری(۳۳۷۱) ابو داؤد(۴۷۳۷) [3] صحیح مسلم(۲۷۰۸)۔