کتاب: اپنے آپ پر دم کیسے کریں - صفحہ 28
کرنے کے لیے جنات سے مدد حاصل کرے۔یا پھر ان سے کسی قسم کی خدمات حاصل کرے۔ اس لیے کہ جنات سے مدد حاصل کرنا شرک کاکام ہے۔ [1]جیسا کہ غائب سے مدد حاصل کرنا جائز نہیں خواہ وہ غائب جنات میں سے ہو یا کوئی دوسری مخلوق۔ اور خواہ وہ مسلمان ہو یا غیر مسلم۔بلا ریب مدد صرف اس حاضر سے طلب کی جاسکتی ہے جو اس پر قدرت رکھتا ہو۔ [2]اوروہ جھاڑ پھونک کرنے والا جو جنات سے مدد طلب کرتا ہو، اس کے اوپر [ایمان کے عدم سلیم ہونے کی] تہمت ہو، تو اس کے پاس علاج کروانا جائز نہیں ۔یہ انسان بھی کاہنوں اور اس طرح کے دوسرے لوگوں کی جنس میں سے ایک ہے۔ ۷۔ جادو کے فضائی چینلز(ٹی وی ) دیکھنا بھی جائز نہیں ہے۔ یہ و ہ لو گ ہیں جو معاشرہ میں باطل چیزوں کو رواج دینے کی کوشش کررہے ہیں ۔ رہ گیا ان چینلز والوں کو فون کرکے سوال پوچھنا اور پھر اس کی تصدیق کرنا؛ تو یہ بھی اس وعید میں شامل ہے کہ نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم نے یہ بھی فرمایا ہے : (( من أتی عرافاً أو کاھناً فصدقہ بما یقول، فقد کفر بما أنزل علی محمد)) [سبق تخریجہ] ’’جو نجومی، کاہن اور فال گر کے پاس آیا اور اس کی بات کی تصدیق کی [1] فتاوی اللجنۃ الدائمۃ، برئاسۃ شیخنا ابن باز رحمہ اللّٰہ ؛ المجموعۃ الثانیۃ(۱؍۹۱)۔ [2] السحر و الشعوذۃ للفوزان(ص۸۶)۔