کتاب: اپنے آپ پر دم کیسے کریں - صفحہ 203
اللہ سبحانہ و تعالیٰ فرماتے ہیں : ﴿ وَاِِمَّا یَنْزَغَنَّکَ مِنْ الشَّیْطَانِ نَزْغٌ فَاسْتَعِذْ بِاللّٰہِ اِِنَّہٗ ہُوَ السَّمِیْعُ الْعَلِیْمُ﴾ [فصلت ۳۶] ’’ اور اگر کبھی شیطان کی طرف سے کوئی اکساہٹ تجھے ابھارہی دے تو اللہ کی پناہ طلب کر، بلاشبہ وہی سب کچھ سننے والا، سب کچھ جاننے والا ہے۔‘‘ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا:’’ تم میں سے کسی ایک کے پاس شیطان آکر اسے کہتا ہے : اس چیز کو کس نے پیدا کیا ہے ؟ اس چیز کو کس نے پیدا کیا ہے ؟ یہاں تک کہ آخر میں وہ کہتا ہے: تیرے رب کو کس نے پیدا کیا ہے ؟۔ جب معاملہ یہاں تک پہنچ جائے تو انسان کو چاہیے کہ ایسی سوچ سے رک جائے اور اعوذ باللہ پڑھ کر اللہ تعالیٰ کی پناہ طلب کرے۔‘‘[1] ۴۔ صبح وشام کے اذکار کو باقاعدگی کے ساتھ پڑھا کرے۔[2] ۵۔ وسوسہ سے نجات پانے کے لیے پختہ عزم کرے؛اور اپنے نفس کے ساتھ مجاہدہ کرے۔ اللہ سبحانہ و تعالیٰ فرماتے ہیں : ﴿وَ الَّذِیْنَ جَاھَدُوْا فِیْنَا لَنَھْدِیَنَّھُمْ سُبُلَنَا وَ اِنَّ اللّٰہَ لَمَعَ الْمُحْسِنِیْنَ﴾ [العنکبوت:۶۹] [1] رواہ البخاري(۲۳۷۶)۔ [2] یہ اذکار اس کتاب میں پہلے گزر چکے ہیں ۔