کتاب: قرآن وحدیث کی روشنی میں احکام و مسائل - صفحہ 430
رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا: ’’ جو شخص مرجائے اور اس کے ذمہ روزے ہوں تو اس کا وارث اس کی طرف سے روزے رکھے۔‘‘ اَلصِّیَامُ الْمَمْنُوْعْ …مکروہ و حرام روزے (۱) صِیَامُ یَوْمِ عِیْدِ الْفِطْرِ .....(۲)صِیَامُ یَوْمِ عِیْدِ الْاَضْحٰی: عید الفطر کے دن کا روزہ رکھنا .....عید الاضحی کے دن کا روزہ رکھنا: (( عَنْ أَبِیْ سَعِیْدٍ رضی اللّٰه عنہ قَالَ نَھَی النَّبِیُّ صلی ا للّٰه علیہ وسلم عَنْ صَوْمِ یَوْمِ الفِطْرِ وَالنَّحْرِ وَعَنِ الصَّمَّائِ وَأَنْ یَحْتَبِیَ الرَّجُلُ فِیْ ثَوْبٍ وَاحِدٍ)) [1] ’’ ابو سعید خدری رضی اللہ عنہ نے بیان کیا کہ نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم نے عید الفطر اور قربانی کے دنوں کے روزوں کی ممانعت کی تھی اور ایک کپڑا سارے بدن پر لپیٹ لینے سے اور ایک کپڑے میں گوٹ مار کر بیٹھنے سے۔‘‘ (۳) صِیَامُ اَیَّامِ التَّشْرِیْقِ .....ایام تشریق میں روزہ رکھنا: (( عَنْ نُبَیْشَۃَ رضی اللّٰه عنہا قَالَ قَالَ رَسُوْلُ ا للّٰه صلی ا للّٰه علیہ وسلم اَیَّامُ التَّشْرِیْقِ أَیَّامُ اَکْلٍ وَّ شُرْبٍ)) [2] ’’ نبیشہ نے کہا کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا: ایام تشریق کے دن کھانے پینے کے دن ہیں ۔‘‘ (۴) صِیَامُ الدَّھْرِ .....ہمیشہ روزہ رکھنا: (( عَنْ عَبْدِ ا للّٰه بْنِ عَمْرٍو رضی اللّٰه عنہ قَالَ قَالَ لِیْ رَسُوْلُ ا للّٰه صلی ا للّٰه علیہ وسلم یَا عَبْدَ ا للّٰه بْنَ عَمْرٍو اِنَّکَ لَتَصُوْمُ الدَّھْرَ تَقُوْمُ اللَّیْلَ وَاِنَّکَ اِذَا فَعَلْتَ ذٰلِکَ ھَجَمَتْ لَہُ الْعَیْنُ وَنَھَکَتْ لاَ صَامَ مَنْ صَامَ الْاَبَدَ صَوْمُ ثَلاَثَۃِ أَیَّامٍ مِّنَ الشَّھْرِ صَوْمُ الشَّھْرِ کُلِّہِ قُلْتُ فَاِنِّیْ اُطِیْقُ اَکْثَرَ مِنْ ذٰلِکَ قَالَ فَصُمْ صَوْمَ دَاؤدَ کَانَ یَصُوْمُ یَوْمًا وَیُفْطِرُ یَوْمًا وَّلاَ یَفِرُّ اِذَا لاَقٰی۔))[3] ’’ عبداللہ بن عمرو رضی اللہ عنہ سے ہے کہ مجھے رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا کہ اے عبداللہ!تم ہمیشہ روزے رکھتے ہو اور ساری رات جاگتے ہو اور تم جب ایسا کرو گے تو آنکھیں بھر بھرا آئیں گی اور ضعیف [1] صحیح بخاری ؍ کتاب الصوم ؍ باب صوم یوم الفطر [2] صحیح مسلم ؍ کتاب الصیام ؍ باب تحریم صوم ایام التشریق [3] صحیح مسلم ؍ کتاب الصیام ؍ باب النہی عن صوم الدھر