کتاب: قرآن وحدیث کی روشنی میں احکام و مسائل - صفحہ 338
طرف پھیردو اگر تم اللہ اور یوم آخرت پر ایمان رکھتے ہو۔ یہی بہتر اور انجام کے لحاظ سے اچھا ہے۔‘‘ ]تو رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم قیام اللیل اور قیام رمضان میں ابتدائی دو رکعتیں اور وتر کے بعد والی دو رکعتیں نکال کر گیارہ رکعات سے زائد نہیں پڑھتے تھے۔ ام المؤمنین عائشہ صدیقہ رضی اللہ عنہ فرماتی ہیں : (( مَا کَانَ یَزِیْدُ فِیْ رَمَضَانَ وَلاَ فِیْ غَیْرِہٖ عَلٰی إِحْدٰی عَشَرَۃَ رَکْعَۃً)) [1] [ ’’ رمضان اور غیر رمضان میں رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم رات کی نماز (بالعموم) گیارہ رکعات سے زیادہ نہیں پڑھتے تھے۔‘‘] ۱۳ ؍ ۱۱ ؍ ۱۴۲۳ھ س: تراویح میں تکمیل قرآن پر مٹھائیاں تقسیم کرنا اور وعظ و تقریر کرنا کیسا ہے؟ (ملک محمد یعقوب) ج: صلاۃ اللیل ، قیام اللیل ، صلاۃ الوتر ، صلاۃ التراویح ، قیام رمضان اور صلاۃ التہجد میں ایک ماہ میں قرآنِ مجید ختم کرنے کی رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے اجازت دی ہے اور کم از کم تین راتوں میں ۔ اس نماز میں قرآن مجید ختم کرنے کی نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم سے اجازت ملتی ہے۔ [2] [ عبداللہ بن عمر رضی اللہ عنہ کو رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا’’ ایک ماہ میں قرآنِ پاک ختم کرلیا کرو۔‘‘ انہوں نے عرض کی میں اس سے زیادہ تلاوت کرنے کی طاقت رکھتا ہوں ۔ آپؐ نے فرمایا: ’’تو بیس دن میں ختم کرلیا کرو۔‘‘ انہوں نے کہا میں اس سے زیادہ طاقت رکھتا ہوں ۔ آپؐ نے فرمایا: ’’سات دن میں ختم کرلیا کرو۔‘‘ انہوں نے کہا: میں اس سے زیادہ طاقت رکھتا ہوں ۔ آپؐ نے فرمایا: ’’سات دن میں ختم کرلیا کرو۔‘‘ اس سے زیادہ کی اجازت نہیں ۔ پھر آپؐ نے انہیں قرآن پاک تین دن میں ختم کرنے کی اجازت دے دی اور فرمایا: ’’قرآنِ پاک سے اس شخص کو کچھ سمجھ حاصل نہیں ہوسکتی، جو تین دن سے کم مدت میں قرآن پاک ختم کرتا ہے۔‘‘ [3]] ہر سال رمضان المبارک میں راتوں میں رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم جبریل صلی اللہ علیہ وسلم کے ہمراہ ایک دفعہ قرآنِ مجید کا دور فرمایا کرتے تھے اور وفات والے سال دو دفعہ دور فرمایا۔ [4]باقی اس نماز میں قرآنِ مجید ختم ہونے کے موقع پر مٹھائی وغیرہ تقسیم کرنا نیز وعظ ، تقریر اور جلسہ منعقد کرنا رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم سے ثابت نہیں ۔ نیز نماز کے علاوہ قرآنِ مجید ختم کرنے کے موقع پر یہ چیزیں رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم سے ثابت نہیں ۔ ۹ ؍ ۱۰ ؍ ۱۴۲۲ھ [1] بخاری ؍ التہجد ؍ باب قیام النبی صلی اللّٰه علیہ وسلم باللیل فی رمضان وغیرہ ، مسلم ؍ صلاۃ المسافرین ؍ باب صلاۃ اللیل وعدد رکعات النبی صلی اللّٰه علیہ وسلم فی اللیل [2] بخاری ؍ الصوم ؍ باب صوم یوم و افطار یوم و فضائل القرآن باب فی کم یقرا القرآن ، ومسلم ؍ الصیام ؍ باب النھی عن صوم الدھر [3] ترمذی ؍ القراء ات ، ابو داؤد ؍ ابواب قراء ۃ القرآن ؍ باب فی کم یقرأ القرآن [4] بخاری ؍ کتاب فضائل القرآن باب کان جبریل یعرض القرآن علی النبی صلی ا للّٰه علیہ وسلم