سورة ھود - آیت 2

أَلَّا تَعْبُدُوا إِلَّا اللَّهَ ۚ إِنَّنِي لَكُم مِّنْهُ نَذِيرٌ وَبَشِيرٌ

ترجمہ ترجمان القرآن - مولانا ابوالکلام آزاد

(اس کا اعلان کیا ہے؟) یہ کہ اللہ کے سوا کسی کی بندگی نہ کرو، یقین کرو میں اسی کی طرف سے تمہیں خبردار کرنے والا اور خوشخبری دینے والا ہوں۔

تفسیر تیسیر الرحمن لبیان القرآن - محمد لقمان سلفی صاحب

(٢) زمخشری نے کہا ہے کہ (الا تعبدوا) فصلت فعل کا مفعول لہ ہے اور معنی یہ ہوگا کہ قرآن کریم میں موجود احکام اور دیگر امور کو تفصیل کے ساتھ اس لیے بیان کردیا گیا ہے کہ تاکہ تم اللہ کے علاوہ کسی اور کی عبادت نہ کرو، ایک قول یہ بھی ہے کہ یہ پہلی آیت سے الگ نبی کریم کی زبانی ایک مستقل کلام ہے، ایسی صورت میں معنی یہ ہوگا کہ نبی کریم نے کفار قریش سے کہا کہ اللہ کے علاوہ کسی کی عبادت نہ کرو اور یہ میں اللہ کی جانب سے تمہیں عذاب نار سے ڈرانے والا اور جنت کی خوشخبری دینے والا ہوں۔