کتاب: مسنون ذکر الٰہی، دعائیں - صفحہ 172
کہ پورا ہفتہ ہم سورج نہ دیکھ پائے۔ اگلے جمعے پھر اسی دروازے سے ایک آدمی داخل ہوا، جب کہ نبی اکرم صلی اللہ علیہ وسلم خطبہ ارشاد فرما رہے تھے۔ اس آدمی نے کہا: یا رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم ! مال ہلاک اور راستے منقطع ہوگئے۔ اللہ سے دعا فرمائیں کہ وہ بارش روک لے۔ نبی اکرم صلی اللہ علیہ وسلم نے ہاتھ اُٹھائے اور یہ دعا فرمائی: (( اَللّٰھُمَّ حَوَالَیْنَا وَ لَا عَلَیْنَا اَللّٰھُمَّ عَلَٰی الْآکَامِ وَالظِّرَابِ وَبُطُوْنِ الْاَوْدِیَۃِ وَمَنَابِتِ الشَّجَرِ ))  ’’اے اللہ! ہمارے اِرد گرد برسا نہ کہ ہم پر، اے اللہ! پہاڑیوں کی چوٹیوں اور ٹیلوں پر برسا، وادیوں کے دامنوں اور درختوں کے جنگلات پر برسا۔‘‘ اسی وقت مطلع صاف ہوگیا اور ہم باہر نکل کر دھوپ میں چلنے لگے۔ چاند دیکھنے کی دُعا: 136۔ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم جب پہلے دن چاند دیکھتے تو یہ دعا